Wednesday, 26 June 2013

درد کیا ہوتا ہے تنہائی کسے کہتے ہیں


اب جو بچھڑے ہیں تو احساس ہوا ہے ہم کو
درد کیا ہوتا ہے تنہائی کسے کہتے ہیں
چار سو گونجتی رسوائی کسے کہتے ہیں

اب جو بچھڑے ہیں تو احساس ہوا ہے ہم کو
کوئی لمحہ ہو تِری یاد میں کھو جاتے ہیں
اب تو خود کو بھی میسر نہیں آپاتے ہیں
رات ہو دن ہو ترے پیار میںہم بہتے ہیں

درد کیا ہوتا ہے تنہائی کسے کہتے ہیں
اَب جو بچھڑے ہیں تو احساس ہوا ہے ہم کو

جو بھی غم آئے اُسے دل پہ سہا کرتے تھے
ایک وہ وقت تھا ہم مل کے رہا کرتے تھے
اب اکیلے ہی زمانے کے ستم سہتے ہیں

درد کیا ہوتا ہے تنہائی کسے کہتے ہیں
اب جو بچھڑے ہیں تو احساس ہوا ہے ہم کو
ہم نے خوداپنے ہی رستے میں بچھائے کانٹے
گھر میں پھولوں کی جگہ لاکے سجائے کانٹے
زخم اس دِل میں بسائے ہوئے خود رہتے ہیں

درد کیا ہوتا ہے تنہائی کسی کہتے ہیں
اب جو بچھڑے ہیں تو احساس ہوا ہے ہم کو
یوں تو دنیا کی ہر اک چیزحسیں ہوتی ہے
پیار سے بڑھ کے مگر کچھ بھی نہیں ہوتی ہے
راستہ روک کے ہر اک سے یہی کہتے ہیں

اب جو بچھڑے ہیں تو احساس ہوا ہے ہم کو
درد کیا ہوتا ہے تنہائی کسے کہتے ہیں
چار سو گونجتی رسوائی کسے کہتے ہیں
اب جو بچھڑے ہیں تو……….

Post a Comment
Related Posts Plugin for WordPress, Blogger...
Blogger Wordpress Gadgets