Thursday, 30 May 2013

قریب آنے لگا دوریوں کا موسم پھر


Sawaal



Aaj kal kis say muhabbat hai tumhen?
Aaj kal kis kay liye pagal ho?

آجکل کس سے محبت ہے تمہیں؟
آجکل کس کے لیے پاگل ہو؟

Bohat he aam hai duniya,bohat he khaas hai tu


Mein khush naseebi hoon teri mujhay bhi raas hai tu
Tera libaas hoon men aur mera libaas hai tu

ajeeb shay hai muhabbat bhi,door hain lekin
Teray qareeb hoon mein meray aas paas hai tu

Kiya hai khud ko faramosh mein nay teray liye
Bohat he aam hai duniya,bohat he khaas hai tu

Zamana hum ko juda kar sakay,nhi mumkin
Muhabbaton men jo naakhun hoon mein to maas hai tu

Yeh rait si meray honton pay jamm gaee kesay
Mujhay gumaan tha keh darya hoon mein to pyaas hai tu

Yeh kaun teray meray darmiyan hai jaanaan
Keh mein bhi dard men hoon aur mehv e yaas hai tu

Aag say jab tum khailo gey jal jaao gey

Thais lagay gi armaanon ko, dheeray say
Maiz pay rakhna paimaanon ko, dheeray say

Un palkon ka jhapki laina yaad rahay
Band karo jab maeykhaanon ko, dheeray say

Yaar ki baaten dard barrhaaye deti hain
Aaj pilana dewaanon ko, dheeray say

Aag say jab tum khailo gey jal jaao gey
Kaan men keh do parwaanon ko, dheeray say

Jashn kay aalam men tu un ko bhool na ja
Galay laga lay veeraanon ko, dheeray say

Be'sabri ushaaq ka shaiwa kab thehra
Karna chaak girebaanon ko, dheeray say

Is mehfil kay apnay aadaab hain wasi
Bahir kar do farzaanon ko, dheeray say

وہ رنگوں میں ڈھلی لڑکی



وہ رنگوں میں ڈھلی لڑکی
کبھی جب بات کرتی ہے
تو اس کے لفظ خوشبو کی طرح محسوس ہوتے ہیں
وہ ہنستی ہے تو جیسے سارا عالم اس ہنسی میں ڈوب جاتا ہے
وہ لب اس کے، وہ آنکھیں اور وہ چہرے کی شادابی
کہ جیسے اپسرا کوئی
وہ میرا نام لیتی ہے تو میری روح میں جیسے نشہ سا اک اُترتا ہے
میرا مَن جھوم اٹھتا ہے
وہ رنگوں میں ڈھلی لڑکی
جھکائے اپنی پلکوں کو کبھی مجھ سے جو کہتی ہے
مجھے تم سے محبت ہے
تو اس کا شرمگیں لہجہ، یقیں مجھ کو دلاتا ہے کہ دُنیا خوبصورت ہے
وہ رنگوں میں ڈھلی لڑکی
اُداسی کے گھنے سایوں کو جب بھی اُوڑھ لیتی ہے
مرا دل خون روتا ہے
میں اس کی شربتی آنکھوں کے نم سے بھیگ جاتا ہوں
وہ رنگوں میں ڈھلی لڑکی
جسے مجھ سے محبت ہے
مرا اظہار سنتی ہے تو پھر سب بھول جاتی ہے
جھکائے اپنی پلکوں کو وہ ایسے مسکراتی ہے
کہ جیسے اپسرا کوئی
وہ رنگوں میں ڈھلی لڑکی
مرے لفظوں میں رہتی ہے
مجھے اکثر یہ کہتی ہے
مجھے تم سے محبت ہے

Tuesday, 28 May 2013

تو نے دیکھی ہے وہ یشانی وہ رخسار وہ ہونٹ؟

ادھوری کوششیں

Ik umr hai keh bitaani hai teray baghair



Ik samaandar hai keh meray muqabil hai
Ik qatra hai keh mujh say sanbhala nhi jata

Ik umr hai keh bitaani hai teray baghair
Ik lamha hai keh mujh sau guzara nhi jata

اک سمندر ہے کہ میرے مقابل ہے
اک قطرہ ہے کہ مجھ سے سنبھالا نہیں جاتا

اک عمر ہے کہ بتانی ہے تیرے بغیر
اک لمحہ ہے کہ مجھ سے گزارا نہیں جاتا

وہ جو تم تھے وہ مر گئے مجھ میں


عکس کتنے اُتر گئے مجھ میں
پھر نجانے کدھر گئے مجھ میں

یہ جو میں ہوں ذرا سا باقی ہوں
وہ جو تم تھے وہ مر گئے مجھ میں

میرے اندر تھی ایسی تاریکی
آ کے آسیب ڈر گئے مجھ میں

میں نے چاہا تھا زخم بھر جایئں
زخم ہی زخم بھر گئے مجھ میں

پہلے اُترا میں دل کے دریا میں
پھر سمندر اُتر گئے مجھ میں

کیسا خاکہ بنا دیا مجھ کو
کون سا رنگ بھر گئے مجھ میں

Monday, 27 May 2013

دسمبر کس لئے آخر ہمیشہ خاص لگتا ہے؟؟


‫وہ درجن بھر مہینوں سے
سدا ممتاز لگتا ہے
دسمبر کس لئے آخر
ہمیشہ خاص لگتا ہے؟؟

بہت سہمی ہوئی صبحیں
اداسی سے بھری شامیں
دوپہریں روئی روئی سی
وہ راتیں کھوئی کھوئی سی


گرم دبیز ہواؤں کا
وہ کم روشن اجالوں کا
کبھی گزرے حوالوں کا
کبھی مشکل سوالوں کا

بچھڑ جانے کی مایوسی
ملن کی آس لگتا ہے
دسمبر کس لئے
آخر ہمیشہ خاص لگتا ہے

کبھی جو حد سے بڑھے دل میں تیری یاد کا حبس


ذرا سی دیر کو منظر سُہانے لگتے ہیں
پھر اُس کے بعد یہی قید خانے لگتے ہیں

میں سوچتا ہوں کہ تو دربدر نہ ہو، ورنہ 
تجھے بھلانے میں کوئی زمانے لگتے ہیں

کبھی جو حد سے بڑھے دل میں تیری یاد کا حبس
کھلی فضا میں تجھے گنگنانے لگتے ہیں

جو تو نہیں ہے تو تجھ سے کئے ہوئے وعدے 
ہم اپنے آپ سے خود ہی نبھانے لگتے ہیں

عجیب کھیل ہے جلتے ہیں اپنی آگ میں ہم
پھر اپنی راکھ بھی خود ہی اُڑانے لگتے ہیں

یہ آنے والے زمانے مرے سہی، لیکن
گذشتہ عمر کے سائے ڈرانے لگتے ہیں

نگار خانہء ہستی میں کیسا پائے ثبات
کہیں کہیں تو قدم ڈگمگانے لگتے ہیں

Tumhen sochoon to to saaray silsilay achay lagtay hain


Yeh din yeh raat yeh lamhay mujhay achay lagtay hain
Tumhen sochoon to to saaray silsilay achay lagtay hain

Bohat door tak chalna magar phir bhi waheen rehna
Mujhay tum say tumhi tak faaslay achay lagtay hain


یہ دن یہ رات یہ لمحے مجھے اچھے لگتے ہیں
تمہیں سوچوں تو سارے سلسلے اچھے لگتے ہیں

بہت دور تک چلنا مگر پھر بھی وہیں رہنا
مجھے تم سے تمہی تک فاصلے اچھے لگتے ہیں

عشق دی رمز والا

اجنبی راستے

Har Taraf Ek Udaasi Si Utar Aati Hai


Image

Jitna Aaya Hai Terey Baad Nazar Baarish Men
Itna Sunsaan Na Tha Pehlay Nagar Baarish Men

Dhul Gaya Lamhon Men Saalon Ka Parra Gard-o-Ghubaar
Ho Gaye Aur Bhee Sar-Sabz Shajar Baarish Men


Tujh Ko Maloom Nahi Royi Huwi Aankh Ka Gham
Kar K Dekho Tou Kisi Shaam Safar Baarish Men

Kamm Tou Pehlay Bhi Nahi Tha Magar Ay Bichray Huway
Barh Gaya Aur Terey Gham Ka Asar Baarish Men

Har Taraf Ek Udaasi Si Utar Aati Hai
Kisi Zindaan Men Dhal Jaata Hai Ghar Baarish Men

Ay Alam'naak Ghataao Usey Jaa Kar Kehna
Takta Rehta Hai Koi Jaanib-e-Dar Baarish Men

Is Qadar Rasmi Hai Wo Shakhs Keh Bas Holay Sey
Pooch Leta Hai Janaab Aaj Kidher Baarish Men ?

Uski Aankhain Ajeeb Azaab Men Hain



Aainay Per Kabhi Kitaab Men Hain
Uski Aankhain Ajeeb Azaab Men Hain

Thaktay Phirtay Hain Dhoop Men Bachay !
Titliaan Saaya-e-Gulaab Men Hain

Ek Kachay Gharay Ki Jurrat Per
Kitni Tugyaaniyaan Chanaab Men Hain

Wo Abhi Tak Hay Ru-Baruu Apnay,
Hum Abhi Tak Hisaar-e-Khwaab Men Hain…!

Uski Aadat Hay Roothna Mohsin
Log Be-Wajah Iztaraab Men Hain

Azaab-E-Deed Men Aankhen Lahu Lahu Kar K



Azaab-E-Deed Men Aankhen Lahu Lahu Kar K,

Main Sharamsaar Hua Teri Justaju Kar K,

Suna Hai Shehar Men Zakhmi Dilon Ka Maila Hai,

Chalen Gey Hum Bhi Magar Pairahan Rafu Kar K,

Musafat-E-Shab-E-Hijraan K Bad Bhaid Khula,

Hawa Dukhi Hai Chiraghon Ki Aabru Kar K,

Yeh Kis Ney Hum Sey Lahu Ka Khiraaj Phir Maanga,

Abhi To Soye They Maqtal Ko Surkhuru Kar K,

Ujaar Rut Ko Gulabi Banaye Rakhti Hai,

Hamari Aankh Teri Deed Sey Wazu Kar Kay..

Sunday, 26 May 2013

Bas Itanaa Hosh Thaa Mujhey Roz-E-Vidaa-E-Dost



Is Kaa Gilaa Nahii Keh Duaa Be-Asar Gaii
Ik Aah Kii Thii Wo Bhii Kahiin Jaa K Mar Gaii

Ay Ham-Nafas Na Puuchh Javaanii Kaa Maajraa
Mauj-E-Nasiim Thii, Idhar Aaii, Udhar Gaii

Daam-E-Gham-E-Hayaat Men Uljhaa Gaii Umiid
Ham Ye Samajh Rahey They Keh Ehasaan Kar Gaii

Is Zindagii Sey Ham Ko Na Duniyaa Milii Na Diin
Taqdiir Kaa Mushaahidaa Kartey Guzar Gaii

Bas Itanaa Hosh Thaa Mujhey Roz-E-Vidaa-E-Dost
Viiraanaa Thaa Nazar Men JahaaN Tak Nazar Gaii

Har Mauj Aab-E-Sindh Huii Waqf-E-Pech-O-Taab
Mehroom Jab Vatan Men Hamaarii Khabar Gaii 

بارش

عشق

Ustade ishq

بھول گئے ہو

Himat agai he

اشک

Ashq beh kar

مانوس اجنبی

Nasir Kazmi

چشم تر

Ajeeb aadmi he

تباہ کر گئ میری ہستی کو

Arzoo teri

شکایت

Shikaayat

محبت

mohabbat jeet hoti he

تو ہے موجود اس قدر مجھ میں

Tu he mojood

اب تم سے بچھڑنے کا امکان بہت ہے

Aik bat kahoon

عزاب ہجر

Waapis palat ja

یہ نہ سوچا تھا کہ تم دل میں اتر جا'و گے

Hum ne dekha tha

تمہاری یاد کاموسم کبھی ہجرت نہیں کرتا


تمہاری یاد کاموسم
کبھی ہجرت نہیں کرتا
یہ دل کو نوچ لیتا ہے
مہینے ہوں یاہوں سال
یہ دل میں بیٹھ جاتا ہے
... پرانے دور کی صورت
کسی سرطان کی مانند
رگوں میں پھیل جاتا ہے
بچھڑ کر شاخ یادوں کی
محبت کے گلابوں کو
ثمر ہونے نہیں دیتا
ہمیں سونے نہیں دیتا
کبھی رونے نہیں دیتا
تمہاری یاد کا موسم!
کبھی ہجرت نہیں کرتا

Mujhay tum yaad aati ho



Tumhen kis nay kaha pagli

mujhay tum yaad aati ho

bohat khush faham ho tum bhi

tumharai khush gumani hai

meri aankhon ki surkhi men

tumhari yaad ka matlab???????

meray shab bhar kay jaagnay men

tumharay khwaab ka matlab???

yeh aankhen to hameesha say he

meri surkh rehti hain

tumhin maaloom hi ho ga

is shehar ki fiza kitni aaluda hai

to yeh sozish,,ussi fizza kay baayes hai

tumhen kis nay kaha pagli

keh main shab bhar nhin sota

mujhay is nokri kay sab jhameelon say

kabhi fursat milay to tab hai na

meri baaton men larzish hai???

main aksar kho sa jaata hoon??

tumhen kis nay kaha pagli

muhabbat kay ilawa aur bhi to dard hotay hain

fikar-e-muaash,sukh ki tlaash,

aisay aur bhi gham hain

aur tum

un sab ghamon kay baad aati ho

tumhen kis nay kaha pagali

mujhay tum yaad aati ho

yah duniya walay pagal hain

zara si baat ko yeh to afsaana samajhtay hain

mujhay ab bhi yeh pagal tera dewana samjhaty hain

tumhen kis nay kaha pagli!!!

magar shayed!!!!!!!

magar shayed main jhhoota hoon

main reza reza ,toota hoon

مستقل انتظار رگوں میں سرائیت کر جائے تو



مستقل انتظار
رگوں میں سرائیت کر جائے
تو موت فورٌا نہیں آتی
بلکہ
اس سے پہلے
کینسر
 diagnose
ہوا ھے اکثر ۔۔

تجھے یاد رکھنے میں کیا کیا بھول جاتا ہوں

Abhi masroof hun

کیوں اتنی لمبی ہو تی ہے، چاندنی رات جُدائی کی



تنکا تنکا کانٹے توڑے ___ ساری رات کٹائی کی 
کیوں اتنی لمبی ہو تی ہے، چاندنی رات جُدائی کی
  
اروں کی روشن فصلیں اور چاند کی ایک درانتی تھی 
ساہوکار نے گروی رکھ لی میری رات کٹائی کی

آنکھوں اور کانوں میں سنا ٹے سے بھر جاتے ہیں 
کیا تم نے اُڑتی دیکھی ہے، ریت کبھی تنہا ئی کی

سینے میں دِل کی آہٹ، جیسے کوئی جاسوس چلے 
ہر سائے کا پیچھا کرنا، عادت ہے ہر جائی کی

 نیند میں کوئی اپنے آپ سے باتیں کرتا رہتا ہے
کال کنویں میں گونجتی ہے، آواز کسی سودائی کی

آج بازار میں پابجولاں چلو


کوئی پرچھائیں جب میری بجھی آنکھوں میں چبھتے اشک چنتی ھے



کوئی آواز
جب تنہا مسافت میں
میرے ہمراہ چلتی ھے
کوئی پرچھائیں
جب میری بجھی آنکھوں میں
چبھتے اشک چنتی ھے

تو لمحہ بھر کو
رک کر سوچتا ھوں میں
کہ اس تنہا مسافت میں
کسی صحرا میں سائے بانٹتے
اشجار کی خوشبو ھے
یا تم ھو۔۔۔ ؟؟

اے عشق ہماری گلیوں میں نہ اور پھرو

Photo: (-Mugheera)

گو ذرا سی بات پر برسوں کے یارانے گئے

Photo: Khaatir ghaznawi ki aiik shahkar Ghazal!
(-Mugheera)

نسخہء عشق

Photo: ‎وہ عجب گھڑی تھی کہ جس گحڑی لیا درس نسخہ عشق کا
کہ کتاب عقل کی طاق پر جو دھری تھی سو دھری رہی
        سراج اورنگ آبادی

{-مغیرہ}‎

صبح صبح اِک خواب کی دستک پر دروازہ کھولا


صبح صبح اِک خواب کی دستک پر دروازہ کھولا
دیکھا سرحد کے اُس پار کے کچھ مہمان آئے ہیں
آنکھوں سے مانوس تھے سارے
چہرے سارے سُنے سنائے
پاؤں دھوئے، ہاتھ دُھلائے
آنگن میں آسن لگوائے
اور تنور پہ مکی کے کچھ موٹے موٹے روٹ پکائے
پوٹلی میں مہمان مِیرے
پچھلے سالوں کی فصلوں کا گڑ لائے تھے
آنکھ کھلی تو دیکھا گھر میں کوئی نہیں تھا
ہاتھ لگا کر دیکھا تو تنور ابھی تک بُجھا نہیں تھا
اور ہونٹوں پر میٹھے گڑ کا ذائقہ اب تک چپک رہا تھا
خواب تھا شاید
خواب ہی ہو گا
سرحد پر کل رات، سُنا ہے،
چلی تھی گولی
سرحد پر کل رات، سُنا ہے
کچھ خوابوں کا خون ہوا تھا

تو کیا تم اتنے ظالم ہو ؟


مرے تیمار داروں سے

مسیحا جب یہ کہہ دیں گے
دوا تاثیر کھو بیٹھی
دُعا کا وقت آ پہنچا
یہ بیماری بہانہ تھی
قضا کا وقت آ پہنچا
تو کیا تم اتنے  بے حس ہو
یقیں اس پر نہ لاؤ گے 
تو کیا تم اتنے  ظالم ہو
مجھے ملنے نہ آؤ گے  ؟

خوش تم بھی نہیں خوش ہم بھی نہیں

Khushi

Sirf woh aik shakhs kisi tarha say mil jata



Sirf woh aik shakhs kisi tarha say mil jata
Mujhay manzoor thay phir jitnay bhi khasaaray hotay

ﺻﺮﻑ ﻭﮦ ﺍﯾﮏ ﺷﺨﺺ ﮐﺴﯽ ﻃﺮﺡ ﺳﮯ ﻣﻞ ﺟﺎﺗﺎ
ﻣﺠﮭﮯ ﻣﻨﻈﻮﺭ ﺗﮭﮯ ﭘﮭﺮ ﺟﺘﻨﮯ ﺑﮭﯽ ﺧﺴﺎﺭﮮ ﮨﻮﺗﮯ

Friday, 24 May 2013

یه راه فقط لوٹ کے جانے کیلئے هے



یه خوش نظری ، خوش نظر آنے کیلئے هے
اندر کی اداسی کو چھپانے کیلئے هے

میں ساتھ کسی کے بهی سہی،پاس هوں تیرے
یه دربدری ایک ٹھکانے کیلئے هے

اس راه په اک عمر گزار آئے تو دیکھا
یه راه فقط لوٹ کے جانے کیلئے هے

ره ره کے کوئی خاک اڑا جاتا هے مجھ میں
کیا دشت هے اور کیسے دیوانے کیلئے هے

تجھ کو نہیں معلوم که میں جان چکا هوں
تو ساتھ فقط ساتھ نبھانے کیلئے هے

تو نسل _ ہوا سے هے، بهلا تجھ کو خبر کیا
وه دکھ جو چراغوں کے گھرانے کیلئے هے

Bas gaee hai meray ehsaas men yeh kesi mehak


Bas gaee hai meray ehsaas men yeh kesi mehak
koi khushbu mein lagaaun teri khushbu aaye

بس گئی ہےمرےاحساس میں یہ کیسی مہک
کوئی خوشبو میں لگاؤں تیری خوشبو آئے

عدت

Iddat

جسے ٹوٹ کے چاہا اسے خبر بھی نہیں

Beloos wafaaen

میں تری یاد کے جنگل میں پھروں عمر تمام



تو کبھی پوچھ ، تو پھر حال بتاؤں تجھ کو
دیر تک روتا رہوں اور رُلاؤں تجھ کو

میں تری یاد کے جنگل میں پھروں عمر تمام
اور یوں ہو کہ کبھی یاد نہ آؤں تجھ کو

تو اگر پیاس کی صورت مرے ہونٹوں پہ رہے
اوس پلکوں سے چنوں اور بجھاؤں تجھ کو

تو ہواؤں کی طرح چھو کے گزر جائے مجھے
میں ہمیشہ کی طرح ڈھونڈ نہ پاؤں تجھ کو

تو مرے خواب میں آ کر مجھے بیدار کرے
نیند بن کر میں چلا آؤں ، سلاؤں تجھ کو

میرے نقش گر کچھ پل ٹھہر


میرے نقش گر

کچھ پل 
ٹھہر 

تیرے بعد خواب کہاں بھلا؟


تجھے خواب کر کے تو دیکھ لوں


یہ جو بے یقینی کے کانچ ہیں


انھیں پلکوں پلکوں سمیٹ لوں


میرے بے خبر

میرے نقش گر۔۔۔۔۔۔۔۔


کچھ پل 
ٹھہر۔۔۔۔ کچھ پل ٹھہر_______!!!!

Wednesday, 22 May 2013

دو تحفے تمہارے واسطے

Do tohfhe

محبت مار دیتی ہے

Mohabbat maar deti he

اسے میرا کتنا خیال تھا

Mera kitna khayaal tha

میری وفا

Meri wafaa se

میرا ضبط بھی کمال ہے

Na sawaal he

میرے ہو کے رہو

Mere ho kar raho

واجبات عشق

Wajibaate ishq

خاموشی

Sab baten fuzool hen

اک پل

Tujhe bhoolne ko aik pal
Related Posts Plugin for WordPress, Blogger...
Blogger Wordpress Gadgets