Tuesday, 21 January 2014

یہ ہجر و وصال بھی عجب ہیں



آئینوں میں خواب ایک سے ہیں
موسم سرِ آب ایک سے ہیں

ہر شخص کے دکھ الگ الگ ہیں
پڑھیے تو نصاب ایک سے ہیں

آنکھیں ہوں، ستارہ ہو کہ جگنو
یہ سارے شہاب ایک سے ہیں

یہ ہجر و وصال بھی عجب ہیں
دونوں کے عذاب ایک سے ہیں

اس کوفۂ تشنگی میں خاور
دریا و سراب ایک سے ہیں

Post a Comment
Related Posts Plugin for WordPress, Blogger...
Blogger Wordpress Gadgets