Friday, 26 September 2014

جب تک میں تیرے دل کی محبت سرا میں ہوں













دُنیا سے بے نیاز ہوں اپنی ہوا میں ہوں


جب تک میں تیرے دل کی محبت

سرا میں ہوں 


اِک تخت اور میرے برابر وہ شاہ زاد


لگتا ہے آج رات میں شہرِ سبا میں ہوں


خُوشبو کو رقص کرتے ہوۓ دیکھنے

لگی

سحِر بہار میں کہ طِلسمِ صبا میں

ہوں 


اس دل کو جب سےغم کی ضمانت

میں دے دیا


اُس وقت سے کسی کے حصارِ دُعا میں ہوں


Post a Comment
Related Posts Plugin for WordPress, Blogger...
Blogger Wordpress Gadgets