Thursday, 11 July 2013

Teray gaisu,teray aaraz,woh badan ki khushbu


aik tum ho keh badal'tay ho thikanay kaya kaya
aik hum hain keh sunaatay hain fasanay kaya kaya

teray gaisu,teray aaraz,woh badan ki khushbu
mujh say halaat nay chheena hai na'janay kaya kaya

ایک تم ہو کہ بدلتے ہو ٹھکانے کیا کیا
ایک ہم ہیں کہ سناتے ہیں فسانے کیا کیا

تیرے گیسو ، ترے عارض ، وہ بدن کی خوش بُو
مجھ سے حالات نے چھینا ہے نہ جانے کیا کیا

Post a Comment
Related Posts Plugin for WordPress, Blogger...
Blogger Wordpress Gadgets