Tuesday, 24 September 2013

کہیں عشق ' کی دیکھی ابتدا


کہیں عشق ' کی دیکھی ابتدا
کہیں عشق ' کی دیکھی انتہا

کہیں عشق ' سولی پہ چڑھ گیا
کہیں عشق ' کا نیزے پہ سر گیا

کہیں عشق ' سیف خدا بنا
کہیں عشق ' شیر خدا بنا

کہیں عشق ' طور پہ دیدار ھے
... کہیں عشق ' ذبح کو تیار ھے

کہیں عشق ' آنکھوں کا نور ھے
کہیں عشق ' کوہ طور ھے

کہیں عشق ' تو ھی تو ھوا
کہیں عشق ' الله ھو ھوا

Post a Comment
Related Posts Plugin for WordPress, Blogger...
Blogger Wordpress Gadgets